محمد عامر نے ریٹائرمنٹ واپس لینے کیلئے شرط رکھ دی

موجودہ ٹیم مینجمنٹ کے ساتھ نہ کھیلنے کے فیصلے پر قائم ہوں،تبدیلی کی صورت میں دستیاب ہونگا: فاسٹ بائولر

28

قومی ٹیم کے فاسٹ بائولر محمد عامر نے انٹرنیشنل کرکٹ میں واپسی کا اعلان کرنے کے لیے شرط رکھ دی ۔ ایک نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے محمد عامر کا کہنا تھا کہ وہ خود پی سی بی کے پاس جاکر انہیں اپنی دستیابی سے آگاہ کریں گے اور یہ پی سی بی پر منحصر ہوگا کہ وہ انہیں سلیکٹ کرتا ہے یا نہیں ۔

نجی ٹی وی کے مطابق محمد عامر نے ٹیم مینجمنٹ تبدیل ہونے کی صورت میں سلیکشن کیلئے دستیابی ظاہر کر دی ہے ، ان کا کہنا تھا کہ اپنی بات پر قائم ہوں کہ موجودہ ٹیم مینجمنٹ کے ساتھ نہیں کھیل سکتا ۔
اس سے قبل انٹرنیشنل کرکٹ سے حال ہی میں کنارہ کشی اختیار کرنے والے فاسٹ بولر محمد عامر نے بتایا تھا کہ ہیڈ کوچ مصباح الحق اور بولنگ کوچ وقار یونس مجھے ذہنی طور پر ٹارچر کرتے آئے، اب میں مزید برداشت نہیں کرسکتا۔

محمد عامر نے پاکستانی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق اور بولنگ کوچ وقار یونس کے بیان کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ مصباح الحق اور وقار یونس میرے مقدمے کو غلط رنگ دے رہے ہیں، میں اب بھی مصباح اور وقار کے ہوتے ہوئے نہیں کھیلنا چاہتا ہوں ۔

انھوں نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ بات اب بہت آگے نکل چکی ہے۔ محمد عامر نے کوچز پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مصباح الحق اور وقار یونس میری کارکردگی پر بات کرتے ہیں،انہیں پہلے اپنی پرفارمنس دیکھنی چاہیئے۔ انھوں نے کہا کہ مصباح اور وقار شکستوں کا ملبہ کورونا پر ڈال رہے ہیں، باقی دنیا کے لیے بھی کورونا ہے۔ محمد عامر نے کہا کہ وقار یونس کو میرے بیانات سے دکھ ہوا تو مجھے اس سے کہیں زیادہ دکھ پہنچا تھا۔
فاسٹ بائولر نے کہا کہ مصباح اور وقار مجھے ذہنی طور پر ٹارچر کرتے آئے، اب مزید برداشت نہیں کرسکتا ہوں ۔ محمد عامر کا کہنا تھا کہ میں پی سی بی یا کرکٹ سے بڑا نہیں ہوں مگر موجودہ حالات میں نہیں کھیل سکتا ۔ انھوں نے کہا کہ کھلاڑیوں کو جب تک آسان ماحول نہیں دیں گے کارکردگی بہتر نہیں ہوسکتی۔