پی ڈی ایم کا 8 دسمبر کو اجلاس ہے، فیصلہ کریں اور استعفے دے دیں، شاہ محمود قریشی

اپوزیشن کا یہ غیر فطری اور وقتی الائنس ہے، اپوزیشن کی جماعتوں میں نظریاتی ہم آہنگی نہیں ہے، یہ کنفیوژن کا شکار ہیں، وزیر خارجہ کی ملتان میں پریس کانفرنس

16

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہاپوزیشن کو استعفے دینے ہیں تو کس نے روکا ہے دے دیں، پی ڈی ایم کا 8 دسمبر کو اجلاس ہے فیصلہ کریں

 

پی ڈی ایم کا 8 دسمبر کو اجلاس ہے، فیصلہ کریں اور استعفے دے دیں، شاہ محمود ..
اور استعفے دے دیں ۔ ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ ملتان میں اپوزیشن کو جلسہ کرنا چاہیے تھا نہ انتظامیہ کو روکنے کی کوشش کرنی چاہیے تھی، کابینہ میں بھی اپوزیشن کو جلسوں سے نہ روکنے کا مشورہ دیا تھا۔

 

اپوزیشن کو ملتان کے قاسم باغ میں جلسے کی اجازت ہونی چاہیے تھی، کنٹینر نہیں لگانے چاہیے تھے، اپوزیشن اسٹیڈیم چلے جاتی تو بے نقاب ہو جاتی۔

 

شاہ محمود نے کہا اپوزیشن کا یہ غیر فطری اور وقتی الائنس ہے، اپوزیشن کی جماعتوں میں نظریاتی ہم آہنگی نہیں ہے، یہ کنفیوژن کا شکار ہیں، اپوزیشن کو استعفے دینے ہیں تو کس نے روکا ہے دے دیں، پی ڈی ایم کا 8 دسمبر کو اجلاس ہے فیصلہ کریں اور استعفے دے دیں۔

 

وزیر خارجہ نے کہا کابینہ کے گزشتہ اجلاس میں میں نے اپنا مؤقف سامنے رکھا تھا، میں نے برملا کہا کہ اپوزیشن کی سرگرمیوں کو نہ روکیں بلکہ مشورہ دیں، یہاں کچھ لوگوں نے تاثر دیا کہ مجھے محدود کیاگیا، اللہ جانتا ہے کس نے کیا کردار ادا کیا ہے،

 

میری سوچ کبھی غیر سیاسی، غیر جمہوری نہیں رہی۔ انہوں نے کہا کرونا تیزی سے پھیل رہا ہے، ملتان میں اپوزیشن کو جلسہ کرنا چاہیے تھا نہ انتظامیہ کو روکنے کی کوشش، کابینہ میں بھی اپوزیشن کو جلسوں سے نہ روکنے کا مشورہ دیا، ملتان میں کسی کی پکڑ دھکڑ میں کوئی کردار ادا نہیں کیا۔