امریکہ کی پاکستان کو کورونا ویکسین بنانے میں تعاون کی پیش کش

حکومت نے امریکی پیشکش پر مثبت جواب دینے کا فیصلہ کرلیا ، وزیراعظم عمران خان نے وزارت صحت کو پاکستانی کمپنیوں سے مشاورت کی ہدایت کرتے ہوئے متعلقہ حکام سے تجاویز مانگ لیں

10

امریکہ کی طرف سے پاکستان کو کورونا ویکسین بنانے میں تعاون کی پیش کش کردی گئی ، حکومت نے بھی امریکی پیشکش پر مثبت جواب دینے کا فیصلہ کرلیا۔

 

امریکہ کی پاکستان کو کورونا ویکسین بنانے میں تعاون کی پیش کش

 

اس حوالے سے تفصیلات میں بتایا گیا ہے کہ امریکہ نے پاکستان کے ساتھ مل کر ویکسین تیار کرنے کی پیشکش کی ہے ،

 

امریکی حکام نے کہا ہے کہ پاکستان کو کورونا ویکسین سازی کے عمل میں خوش آمدید کہا جائے گا ، پاکستان سے متوقع کورونا ویکسین بنانے میں تعاون کیلئے تیار ہیں جس کے تحت امریکی کمپنیاں پاکستان سے ویکسین سازی میں تعاون کر سکتی ہیں ، باہمی تعاون سے پاکستانی کمپنیاں بھی مقامی طور کورونا ویکسین تیار کرسکیں گی۔

 

ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں واشنگٹن میں پاکستانی مشن نے حکومت کو اس امریکی پیشکش کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے متعلقہ فریقین سے مشاورت کی تجویز دی ہے ،

 

جس کی بناء پر پاکستان نے کورونا ویکسین سازی کی امریکی پیشکش پر مثبت جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے ، اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کی طرف سے وزارت صحت کو پاکستانی کمپنیوں سے مشاورت کی ہدایت کرتے ہوئے متعلقہ حکام سے پیشکش پر تجاویز بھی مانگی گئی ہیں۔

 

قبل ازیں امریکہ کی طرف سے پاکستان کو کورونا ویکیسن نہ دینے کی خبریں بھی بے بنیاد قرار دے دی گئیں ،

 

تفصیلات کے مطابق اس حوالے سے امریکی حکام کا کہنا ہے کہ ویکسین تیار ہونے کے بعد عالمی وباء کورونا وائرس کے خاتمے کے لیے دیگر ممالک کو اس کی فراہمی کے لیے پر عزم ہیں ، تاہم عالمی سطح پر یہ ویکسین مقامی ضروریات پوری ہونے کے بعد فراہم کی جائیں گی۔

 

واضح رہے کہ پاکستان نے عالمی وبا کورونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین کے لیے ایڈوانس بکنگ کا فیصلہ کیا تھا ۔ایک انٹرویومیں پارلیمانی سیکرٹری برائے صحت نوشین حامد نے بتایا

 

کہ وزیراعظم عمران خان نے دوا کی ایڈوانس بکنگ کرانے کی منظوری دیدی ہے جس کے بعد حکومتی سطح پر پاکستان نے 2 بڑی فارماسیوٹیکل کمپنیوں سے رابطہ کیا ہے ، نوشین حامد نے بتایا کہ بہت جلد پاکستان ویکسین کی ایڈوانس بکنگ کیلئے پیسے ادا کردے گا۔